10

نہ استعفیٰ لیا نہ استعفے دیے

اُس رات چک شہزاد کے فارم ہاؤس پر ایسا کیا ہوا کہ وزیراعظم عمران خان سے استعفیٰ لینے، حکومت گرانے کے خواب چکنا چور ہوگئے۔ نہ صرف 26مارچ کو ہونے والا لانگ مارچ ملتوی ہوگیا بلکہ 11جماعتوں کا اتحاد سُکڑ کر نو تک پہنچ گیا۔ تحریک چلنے سے پہلے ہی تحلیل ہوگئی ہے۔ اب ساری صورتحال کے ذمہ داروں کا تعین کیا جارہا ہے مگر زبان میں تلخی بڑھتی نظر آرہی ہے۔

میں تو اسلام آباد صحافیوں کے اپریل میں ہونے والے لانگ مارچ کی تیاریوں کے سلسلے میں گیا تھا سوچا اپوزیشن کے لانگ مارچ کی تیاری دیکھ لوں مگر یہاں تو معاملہ ہی پلٹ چکا تھا۔ وزیراعظم سے استعفیٰ مانگنے والے اب زرداری صاحب سے استعفوں کا مطالبہ کرنے لگے۔ پی پی پی کہاں اس پر تیار ہوتی وہ تو آج تک اِس بات پر افسردہ ہے کہ 1985 کے غیر جماعتی الیکشن سے کیوں باہر رہی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں