5

محنت کشوں کے سفاک قاتل؟

اداسیوں نے مجھے، آپ کو اورمیرے وطن کو گھیر رکھا ہے

کوئی دن بھی موت کی للکار سنے بغیر نہیں گزرتا۔

ایک طرف کورونا اجل کے ہاتھ میں ہاتھ ڈالے پوری دنیا میں سانسوں کی ڈور کاٹتا پھر رہا ہے۔ بستیاں ماتم کناں ہیں۔ جنازے اٹھ رہے ہیں۔ گھر اجڑ رہے ہیں۔ کہیں ماؤں کی گود خالی ہورہی ہے۔ کہیں مائیں اپنی ٹھنڈی چھاؤں سمیت بیٹوں بیٹیوں کو یتیمی کے حوالے کرکے رخصت ہورہی ہیں۔ 2020گھروں کو بیاباں کرتا رہا ہے۔ اب 2021بھی 2020کی تقلید میں موت کا ہرکارہ بن رہا ہے۔ واہگہ سے گوادر تک قضا دندنارہی ہے۔ ہم، آپ، حکمران، اپوزیشن، نوکر شاہی اپنے اپنے معمولات میں ایسے مگن ہیں جیسے وطن کے گلی کوچوں میں کچھ ہوا ہی نہیں۔ وہی بیسویں صدی کے جلسے جلوس۔گلا پھاڑ پھاڑ کر نعرے۔ ترجمانوں کی فوج ظفر موج ٹوئٹر سے تیر اندازی کررہی ہے۔ ترجمانوں کی حکومت کے پاس کمی ہے نہ اپوزیشن کے پاس۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں