5

نونی اور پیپلا

نونی: شیر۔ شیر۔ نہیں چھوڑیں گے، ہٹا کے دم لیں گے، یہ حکومت نہیں چلنے دیں گے چاہے یہ سب کو گرفتار کر لے۔ ہمارے مصالحتی لیڈر شہباز شریف اور خواجہ آصف اندر چلے گئے ہیں، چاہے باقی بھی گرفتار ہو جائیں مگر انصافیوں کی حکومت ختم کر کے رہیں گے۔

پیپلا: جیے بھٹو، جیے بے نظیر، سیاست تحمل کا نام ہے، قربانیوں اور شہادتیں دینے کا نام ہے۔ تبدیلی فوراً نہیں آتی، بڑی دیر انتظار کرنا پڑتا ہے۔ تم اور ہم ایک کشتی میں ضرور ہیں مگر ہمارا تجربہ اور ہے، تمہارا تجربہ اور ہے۔ ہم نے کئی آمروں کو نکالا ہے، آپ نے لمبی مزاحمت کا تجربہ نہیں کیا۔

نونی: ایسی بات نہیں، ہم نے تحریکِ نجات چلائی، مشرف کے خلاف مزاحمت کی اور اب بھی مسلسل گرفتاریاں دے رہے ہیں۔ اب قربانیوں میں ہم پیپلز پارٹی سے پیچھے نہیں۔ ہم مصلحت سے کام نہیں لیتے۔ نواز شریف سرعام سلیکٹرز کے نام لیتا ہے۔ مریم نواز سب کو للکارتی ہے۔ بلاول مصلحت سے بات کرتا ہے، آپ استعفے ہوں یا لانگ مارچ۔۔۔ اُن کے بارے میں تحفظات کا شکار ہیں۔ ہماری لیڈر شپ تیار ہے جبکہ آپ تذبذب کا شکار ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں