5

مدّاحین کی سہولت کے لئے چند ہدایات!

جیسا کہ آپ سب جانتے ہیں کہ میرے ڈراموں، سفرناموں، کالموں اور میری شاعری کی دھوم چار دانگ عالم میں ہے چنانچہ گھر سے باہر قدم رکھتے ہی میرے مداحوں کا ہجوم میرے گرد اکٹھا ہو جاتا ہے اور سیلفیاں بناتا ہے، آٹو گراف مانگتا ہے اور یوں میری پرائیویسی میں خلل ڈالنے کا باعث بنتا ہے۔

چنانچہ جب مجھے کسی (بھی) مقام پر جلدی پہنچنا ہو، میں لوہے کی پیٹی میں سے نانی اماں مرحومہ کا شٹل کاک برقع نکالتا ہوں اور وہ پہن کر گھر سے باہر قدم رکھتا ہوں، چونکہ اُس برقع نے آنکھیں بھی تقریباً ڈھانپی ہوتی ہیں چنانچہ اکثر کسی کھمبے سے جا ٹکراتا ہوں، میری بیوی اکثر کہتی ہے کہ آپ اِس برقعے کی بجائے فیشنی برقع پہن کر نکلا کریں جس پر کڑھائی کا بھی بہت عمدہ کام ہوا ہوتا ہے، آنکھیں بھی ڈھانپنا نہیں پڑتیں، یہ برقع آپ کے جسم کے نشیب و فراز کے مطابق ہوتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں