6

بھارتی ریاستی دہشت گردی، پاکستان کیا کرے؟

’’آئینِ نو‘‘ کے جاری موضوع پر کالم کی گزشتہ اشاعت میں 15 برسوں سے پاکستان کے خلاف جاری عالمی ذرائع سے بے نقاب ہونے والی بھارتی ریاستی دہشت گردی کا مختصر احاطہ اور اُسے کائونٹر کرنے کی ہماری اپنی سکت سے اِس کا موازنہ کرتے یہ سوال اُٹھایا تھا کہ ہم اپنی سرزمین اور 116 ملکوں میں جاری پاکستان مخالف بھارتی ففتھ جنریشن وار کا نتیجہ خیز جواب دینے کے لیے کیا کریں؟

اِس بڑی، قومی، فوری اور حساس ضرورت کو پورا کرنے کے لیے یہ سمجھنا لازم ہے کہ پاکستان کیخلاف بھارت کی یہ جنگ کمیونیکیشن سائنس کے غلبے کے ساتھ ملٹی ڈسپلنری اپروچ اور منظم اطلاق کی حامل ہے۔

اِس میں آئی ٹی، جدید بینکنگ، ڈویلپمنٹ سائنس اور جملہ مطلوب علوم سے مدد لیتے ہوئے انتہا کے مذموم اہداف مقرر کرتے ہوئے ایک خفیہ بین الاقوامی نظام قائم کیا گیا ہے۔ یہ روایتی پروپیگنڈہ سائنس اور فقط سائیکلوجیکل وار فیئر کے اطلاق سے دشمن (پاکستان) کا مورال گرانے، اپنا بڑھانے، ہمیں بدنام اور خود کو سرخرو کرنے اور دنیا کو قائل کرنے سے کہیں بڑھ کر شیطانی طرزِ جنگ ہے، اِس میں ہمارے داخلی، سیاسی استحکام کو پارہ پارہ کرنے، افواج و عوام میں خلیج پیدا کرنے اور اقتصادی تباہی کی طرف لے جانے کی یکطرفہ اور مسلسل ریاستی بھارتی کوشش ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں