6

استعفوں کے بعد ضمنی انتخابات ہوئے تو چوڑیاں پہن کر گھر نہیں بیٹھیں گے، مریم نواز

لاہور: مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے کہ قومی اور صوبائی اسمبلیوں کی 500 نشستوں پر ضمنی الیکشن نہیں کرائے جاسکتے اور اگر ضمنی انتخابات کا اعلان کیا گیا تو ہم چوڑیاں پہن کر گھر میں نہیں بیٹھیں گے۔

لاہور میں پریس کانفرنس کے دوران مریم نواز نے کہا کہ آئین کے تحت نئے سینیٹرز کو 11 مارچ کے بعد حلف اٹھانا ہے،سینیٹ الیکشن سے متعلق پی ڈی ایم فیصلے کرے گی، سینیٹ کا الیکشن پہلے یا بعد میں کرالیں، حکومت کو نہیں بچاسکتے، قبل ازوقت سینیٹ الیکشن سے حکومت کو دوام نہیں ملے گا، ان کو سمجھ آگئی ہے کہ حکومت کے دن تھوڑے ہیں، جو بھی ہتھکنڈے اپنالیں آپ کو گھر تو جانا پڑے گا۔

رہنما (ن) لیگ کا کہنا تھا کہ جلسوں سے فرق نہیں پڑتا تو سینیٹ الیکشن قبل ازوقت کیوں کرائے جارہے ہیں، کیا انہوں نے اداروں اور آئین پاکستان کا حلیہ بگاڑنے کا ٹھیکہ لیا ہے؟ عمران خان نے کس حیثیت میں سینیٹ الیکشن ایک ماہ پہلے کرانے کا فیصلہ کیا، کیا آپ کو کسی نے نہیں بتایا کہ آپ الیکشن کے اعلانات نہیں کرسکتے، ذاتی مفادات کے لئے آپ آئین کا حلیہ نہیں بگاڑ سکتے نہ ہم اس کی اجازت دیں گے، الیکشن کمیشن آئینی ادارہ ہے اسے آئین کے مطابق چلنا چاہیے، چیئرمین ای سی پی کسی غیر آئینی اور غیر قانونی اقدام کو نہ مانے، قوم الیکشن کمیشن آف پاکستان پر نظر لگا کر بیٹھی ہے۔ الیکشن کمیشن جعلی اقدامات کومانتا ہے تو قوم سمجھے گی آپ جانبدار ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں