7

حکومت اپوزیشن کا نہیں مہنگائی کا خاتمہ کرے

الفاظ بوکھلائے ہوئے بولنے والوں کا منہ تکتے رہتے ہیں۔ معانی دربدر ہیں۔ بے معنی گفتگو وائرل ہورہی ہے۔ بڑے چھوٹے مہمل اظہاریوں میں مزے لیتے ہیں۔ تاریخ سے سبق سیکھنا ناگوار سمجھا جاتا ہے۔ اپنے تجربات اپنے مشاہدات بھی قابل توجہ نہیں رہے۔ ٹیکنالوجی جدید ترین اور تیز تر ہے۔ ہمارے رویے قدیم ترین رفتار سست تر ۔ نتیجہ :سماج معلق ہوگیا ہے۔ کمپیوٹر کی زبان میں پاکستانی معاشرہ فی الحال Hang ہوا ہے۔ اکثریت اسے اپنا مقدر خیال کر بیٹھی ہے۔

وزیر اعظم عمران خان کو پی ڈی ایم کا شکر گزار ہونا چاہئے کہ ان کا وینٹی لیٹر ہٹاکر انہیں 31جنوری تک مہلت دے دی ہے۔حالانکہ وہ کہہ چکے ہیں کہ عمران خان کا ایک لمحہ بھی حکومت میں رہنا ملک کے لیے خطرناک ہے۔ یہ 48دن یقیناً تاریخ ساز ہوسکتے ہیں۔

پی ڈی ایم کے لیے بھی۔ مگر عمران خان زیادہ فائدہ اٹھاسکتے ہیں۔ پی ڈی ایم ان دنوں چھوٹی چھوٹی ریلیاں کرکے ٹیمپو برقرار رکھنا چاہے گی۔ لیکن تاریخ کے طالب علم جانتے ہیں کہ لاہور کے جلسے نے ملتان سے بڑھنے والا ٹیمپو توڑ دیا ہے۔ پی ڈی ایم کے ساتھ وہی ہوا ہے جو عمران خان کے ساتھ ہوا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں