7

سیاسی مکالمہ

عین: (نون اور شین سے) لاہور میں آپ کا ڈرامہ فلاپ ہو گیا نہ آر ہوا نہ پار، میں گلابی دھوپ میں اپنے کتوں شیرو اور ٹائیگر سے کھیلتا رہا، مجھے تمہارے جلسوں کی کوئی فکر نہیں، کچھ بھی کر لو میں نے این آر او نہیں دینا۔

شین: (بات کاٹتے ہوئے) منتقم اور ظالم حکمران سے اور کیا توقع کی جا سکتی ہے؟ لاہور کا جلسہ بہت کامیاب رہا، میں نے خواجہ عمران اور برکی کی ڈیوٹی لگائی تھی کہ مجھے بالکل صحیح تعداد بتائیں، دونوں نے الگ الگ بتایا ہے کہ عین کے مینار پاکستان جلسے سے دوگنا لوگ تھے، باقی رہی این آر او کی بات تو آپ لوگوں سے این آر او مانگ کون رہا ہے؟

عین: (اونچی آواز میں) مجھے سب علم ہے، یہ جلسے، لانگ مارچ اور استعفے، سب غیرملکی سازش ہے۔ ایک دوست ملک کی پشت پناہی نہ ہو تو آپ کچھ نہ کر سکیں، مجھے علم ہے آپ کو پیسہ کون دے رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں