8

زکام کی ’ہر فن مولا‘ ویکسین کی پہلی انسانی آزمائش کامیاب

نیو یارک: سائنسدانوں نے موسمی زکام سے بچانے کےلیے ’’یونیورسل فلو ویکسین‘‘ کی پہلے مرحلے کی طبّی آزمائشوں (فیز ون کلینیکل ٹرائلز) میں کامیابی حاصل کرلی ہے، جس کے بعد وہ اسے دوسرے مرحلے کی طبّی آزمائشیں شروع کرنے کی تیاریوں میں مصروف رہے ہیں۔

واضح رہے کہ زکام کے وائرس یعنی ’’فلو وائرس‘‘ کی سطح پر ایک خاص قسم کا پروٹین ’’ہیماگلوٹٹینن‘‘ (ایچ اے) پایا جاتا ہے۔ کوئی بھی فلو ویکسین ہمارے قدرتی دفاعی نظام کو اس قابل بناتی ہے کہ وہ اسی پروٹین کی بنیاد پر فلو وائرس کو شناخت کرتا ہے اور اس کا خاتمہ بھی کرتا ہے۔

البتہ ’’ایچ اے‘‘ پروٹین کا بالائی حصہ، جسے موجودہ ویکسینز ’’شناختی مقام‘‘ کے طور پر استعمال کرتی ہیں، بہت جلدی تبدیل ہونے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ہر سال موسمی زکام کا پھیلاؤ روکنے کےلیے نئی ویکسین تیار کرنا پڑتی ہے کیونکہ پچھلے سال والی ویکسین ناکارہ ہوچکی ہوتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں