12

لیاری میں گینگ وار پھر سے سر اٹھانے لگا

کراچی کے لیاری میں گینگ وار پھر سے سر اٹھانے لگا ہے اور علاقے کی خواتین گینگ وار سے نجات دلانے کی فریاد لیکر سندھ ہائی کورٹ پہنچ گئیں۔

لیاری کی خواتین نے سندھ ہائی کورٹ میں دائر درخواست میں کہا ہے کہ مبینہ ملزم ایوب بلا لیاری میں خوف کی نئی علامت بن گیا ہے۔

لیاری کے عبدالجبار نامی تاجر کی 6 بیٹیاں تحفظ کی بھیک مانگنے پر مجبور ہیں اور خواتین کا دعویٰ ہے کہ ملزمان کو سیاسی شخصیات کی سرپرستی حاصل ہے۔

متاثرہ خواتین کے مطابق ایوب بلا، ادا اقبال نامی شخص کی سرپرستی میں لیاری وار متحرک ہو گیا ہے۔

درخواست گزار سائرہ نے وزیراعظم، وزیراعلیٰ سندھ، آئی جی سندھ، ڈی جی رینجرز سے مدد کی اپیل کی ہے۔

خاتون کا مزید کہنا ہے کہ علاقے کی پولیس اور قانون نافذ کرنے والے ادارے بھی لیاری گینگ وار کے خلاف کارروائی نہیں کرتے، میرے بھائی ابھی بڑے ہوئے ہیں، یہ لوگ میرے بھائیوں کو مارنا چاہتے ہیں، خدارا ہمارے بھائیوں کو گینگ وار سے بچائیں۔

درخواست گزار خاتون کا یہ بھی کہنا ہے کہ گینگ وار کے ایوب بلا، امان بلا، وقاص تیجا، بلال، سیف اور ماجد نے گودام پر قبضہ کر لیا ہے اور پولیس نے سیاسی شخصیات کے دباؤ پر الٹا ہمارے بھائی کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں